مسجدالاقصی کے انہدام سے مذہبی جنگ شروع ہو سکتی ہے فلسطینی وزیر کا انتباہ PDF Print E-mail
Written by alihaider   
Tuesday, 14 May 2013 13:11

فلسطین کے مذہبی امور کے وزیر نے صہیونیوں کے ہاتھوں مسجد الاقصیٰ کے انہدام کے بارے خبردار کیا ہے۔
اسماعیل رادوان نے اس بارے کہا ہے کہ اگر مسجد الاقصیٰ کو کوئی نقصان پہنچا تو مذاہب کی جنگ چھڑ جائے گی کہ جو انتہائی خطرناک ہے۔
رادوان نے مزید کہا ہے کہ صہیونیوں کے مسلسل حملوں کی بنا پر اگر مسجدالاقصی ٰ کو کوئی نقصان پہنچا تومذہبی جنگ چھڑ جائے گی کہ جو کسی کے فائدے میں نہیں ہو گی۔
فلسطین کے وزیر مذہبی امور نے عرب لیگ اور او آئی سی سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ مسجد الاقصیٰ کے بارے صہیونی دھمکیوں کے خلاف عملی اقدام کریں۔
قابل ذکر ہے ہے گزشتہ ہفتے صہیونی حکومت کی جانب سے ایک قانون کی منظوری پرمبنی خبرشائع ہوئی تھی کہ جس کی بنا پر شدت پسند یہودیوں کو مسجدالاقصیٰ میں اپنے مذہبی اعمال انجام دینے کی اجازت ہے۔
فلسطین کی مزاحمتی تحریکوں نے اس قانون پر خبردار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم حرم حضرت ابراہیم علیہ السلام میں ہونے والے واقعہ کے دوبارہ تکرار کی اجازت نہیں دیں گے۔
یاد رہے کہ فروری ۱۹۹۴ء میں بعض شدت پسند یہودیوں نے حر م ابراہیمی میں نمازیوں پر فائرنگ کر دی تھی جس کے نتیجے میں ۲۹فلسطین جاں بحق ہو گئے تھے۔

Last Updated on Tuesday, 14 May 2013 13:19